Sunan Ibn Majah - Chapters On Medicine 33 - Hadith #3449

Chapter Chapters On Medicine
Book Sunan Ibn Majah Sunan Ibn Majah
Hadith No 3449
Baab الطب (طب) ‌كے ‌احكام ‌و مسائل
خالد بن سعد رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ   ہم سفر پر نکلے، ہمارے ساتھ غالب بن ابجر بھی تھے، وہ راستے میں بیمار پڑ گئے، پھر ہم مدینہ آئے، ابھی وہ بیمار ہی تھے، تو ان کی عیادت کے لیے ابن ابی عتیق آئے، اور ہم سے کہا: تم اس کالے دانے کا استعمال اپنے اوپر لازم کر لو، تم اس کے پانچ یا سات دانے لو، انہیں پیس لو پھر زیتون کے تیل میں ملا کر چند قطرے ان کی ناک میں ڈالو، اس نتھنے میں بھی اور اس نتھنے میں بھی، اس لیے کہ ام المؤمنین عائشہ رضی اللہ عنہا نے ان سے حدیث بیان کی کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اس کالے دانے یعنی کلونجی میں ہر مرض کا علاج ہے، سوائے اس کے کہ وہ «سام» ہو ، میں نے عرض کیا کہ «سام» کیا ہے؟ تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: موت ۔
It was narrated that Khalid bin Sa’d said:
“We went out and with us was Ghalib bin Abjar. He fell sick along the way, and when we came to Al-Madinah he was sick. Ibn Abu ‘Atiq came to visit him and said to us: ‘You should use this black seed. Take five or seven (seeds) and grind them to a powder, then drop them into his nose with drops of olive oil, on this side and on this side. For ‘Aishah narrated to them that she heard the Messenger of Allah (ﷺ) say: “This black seed is a healing for every disease, except the Sam.” I said: “What is the Sam?” He said: “Death.”
حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِي شَيْبَةَ،‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ،‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا إِسْرَائِيلُ،‏‏‏‏ عَنْ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ عَنْ خَالِدِ بْنِ سَعْدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ خَرَجْنَا وَمَعَنَا غَالِبُ بْنُ أَبْجَرَ فَمَرِضَ فِي الطَّرِيقِ،‏‏‏‏ فَقَدِمْنَا الْمَدِينَةَ وَهُوَ مَرِيضٌ،‏‏‏‏ فَعَادَهُ ابْنُ أَبِي عَتِيقٍ،‏‏‏‏ وَقَالَ لَنَا:‏‏‏‏ عَلَيْكُمْ بِهَذِهِ الْحَبَّةِ السَّوْدَاءِ،‏‏‏‏ فَخُذُوا مِنْهَا خَمْسًا أَوْ سَبْعًا فَاسْحَقُوهَا،‏‏‏‏ ثُمَّ اقْطُرُوهَا فِي أَنْفِهِ بِقَطَرَاتِ زَيْتٍ فِي هَذَا الْجَانِبِ،‏‏‏‏ وَفِي هَذَا الْجَانِبِ،‏‏‏‏ فَإِنَّ عَائِشَةَ حَدَّثَتْهُمْ،‏‏‏‏ أَنَّهَا سَمِعَتْ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ يَقُولُ:‏‏‏‏ إِنَّ هَذِهِ الْحَبَّةَ السَّوْدَاءَ شِفَاءٌ مِنْ كُلِّ دَاءٍ،‏‏‏‏ إِلَّا أَنْ يَكُونَ السَّامُ ،‏‏‏‏ قُلْتُ:‏‏‏‏ وَمَا السَّامُ؟ قَالَ:‏‏‏‏ الْمَوْتُ .
Reference : Sunan Ibn Majah 3449
In-book reference : Book 33, Hadith 14
USC-MSA web (English) reference
(deprecated numbering scheme)
: Vol. 4, Position 124 of Hadith 3449.
Sunan Ibn Majah
Hadith# 3449
حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِي شَيْبَةَ،‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ،‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا إِسْرَائِيلُ،‏‏‏‏ عَنْ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ عَنْ خَالِدِ بْنِ سَعْدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ خَرَجْنَا وَمَعَنَا غَالِبُ بْنُ أَبْجَرَ فَمَرِضَ فِي الطَّرِيقِ،‏‏‏‏ فَقَدِمْنَا الْمَدِينَةَ وَهُوَ مَرِيضٌ،‏‏‏‏ فَعَادَهُ ابْنُ أَبِي عَتِيقٍ،‏‏‏‏ وَقَالَ لَنَا:‏‏‏‏ عَلَيْكُمْ بِهَذِهِ الْحَبَّةِ السَّوْدَاءِ،‏‏‏‏ فَخُذُوا مِنْهَا خَمْسًا أَوْ سَبْعًا فَاسْحَقُوهَا،‏‏‏‏ ثُمَّ اقْطُرُوهَا فِي أَنْفِهِ بِقَطَرَاتِ زَيْتٍ فِي هَذَا الْجَانِبِ،‏‏‏‏ وَفِي هَذَا الْجَانِبِ،‏‏‏‏ فَإِنَّ عَائِشَةَ حَدَّثَتْهُمْ،‏‏‏‏ أَنَّهَا سَمِعَتْ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ يَقُولُ:‏‏‏‏ إِنَّ هَذِهِ الْحَبَّةَ السَّوْدَاءَ شِفَاءٌ مِنْ كُلِّ دَاءٍ،‏‏‏‏ إِلَّا أَنْ يَكُونَ السَّامُ ،‏‏‏‏ قُلْتُ:‏‏‏‏ وَمَا السَّامُ؟ قَالَ:‏‏‏‏ الْمَوْتُ .
خالد بن سعد رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ   ہم سفر پر نکلے، ہمارے ساتھ غالب بن ابجر بھی تھے، وہ راستے میں بیمار پڑ گئے، پھر ہم مدینہ آئے، ابھی وہ بیمار ہی تھے، تو ان کی عیادت کے لیے ابن ابی عتیق آئے، اور ہم سے کہا: تم اس کالے دانے کا استعمال اپنے اوپر لازم کر لو، تم اس کے پانچ یا سات دانے لو، انہیں پیس لو پھر زیتون کے تیل میں ملا کر چند قطرے ان کی ناک میں ڈالو، اس نتھنے میں بھی اور اس نتھنے میں بھی، اس لیے کہ ام المؤمنین عائشہ رضی اللہ عنہا نے ان سے حدیث بیان کی کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اس کالے دانے یعنی کلونجی میں ہر مرض کا علاج ہے، سوائے اس کے کہ وہ «سام» ہو ، میں نے عرض کیا کہ «سام» کیا ہے؟ تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: موت ۔
It was narrated that Khalid bin Sa’d said: “We went out and with us was Ghalib bin Abjar. He fell sick along the way, and when we came to Al-Madinah he was sick. Ibn Abu ‘Atiq came to visit him and said to us: ‘You should use this black seed. Take five or seven (seeds) and grind them to a powder, then drop them into his nose with drops of olive oil, on this side and on this side. For ‘Aishah narrated to them that she heard the Messenger of Allah (ﷺ) say: “This black seed is a healing for every disease, except the Sam.” I said: “What is the Sam?” He said: “Death.”
Sunan Ibn Majah
Hadith# 3449
حَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِي شَيْبَةَ،‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ،‏‏‏‏ أَنْبَأَنَا إِسْرَائِيلُ،‏‏‏‏ عَنْ مَنْصُورٍ،‏‏‏‏ عَنْ خَالِدِ بْنِ سَعْدٍ،‏‏‏‏ قَالَ:‏‏‏‏ خَرَجْنَا وَمَعَنَا غَالِبُ بْنُ أَبْجَرَ فَمَرِضَ فِي الطَّرِيقِ،‏‏‏‏ فَقَدِمْنَا الْمَدِينَةَ وَهُوَ مَرِيضٌ،‏‏‏‏ فَعَادَهُ ابْنُ أَبِي عَتِيقٍ،‏‏‏‏ وَقَالَ لَنَا:‏‏‏‏ عَلَيْكُمْ بِهَذِهِ الْحَبَّةِ السَّوْدَاءِ،‏‏‏‏ فَخُذُوا مِنْهَا خَمْسًا أَوْ سَبْعًا فَاسْحَقُوهَا،‏‏‏‏ ثُمَّ اقْطُرُوهَا فِي أَنْفِهِ بِقَطَرَاتِ زَيْتٍ فِي هَذَا الْجَانِبِ،‏‏‏‏ وَفِي هَذَا الْجَانِبِ،‏‏‏‏ فَإِنَّ عَائِشَةَ حَدَّثَتْهُمْ،‏‏‏‏ أَنَّهَا سَمِعَتْ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ،‏‏‏‏ يَقُولُ:‏‏‏‏ إِنَّ هَذِهِ الْحَبَّةَ السَّوْدَاءَ شِفَاءٌ مِنْ كُلِّ دَاءٍ،‏‏‏‏ إِلَّا أَنْ يَكُونَ السَّامُ ،‏‏‏‏ قُلْتُ:‏‏‏‏ وَمَا السَّامُ؟ قَالَ:‏‏‏‏ الْمَوْتُ .
خالد بن سعد رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ   ہم سفر پر نکلے، ہمارے ساتھ غالب بن ابجر بھی تھے، وہ راستے میں بیمار پڑ گئے، پھر ہم مدینہ آئے، ابھی وہ بیمار ہی تھے، تو ان کی عیادت کے لیے ابن ابی عتیق آئے، اور ہم سے کہا: تم اس کالے دانے کا استعمال اپنے اوپر لازم کر لو، تم اس کے پانچ یا سات دانے لو، انہیں پیس لو پھر زیتون کے تیل میں ملا کر چند قطرے ان کی ناک میں ڈالو، اس نتھنے میں بھی اور اس نتھنے میں بھی، اس لیے کہ ام المؤمنین عائشہ رضی اللہ عنہا نے ان سے حدیث بیان کی کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اس کالے دانے یعنی کلونجی میں ہر مرض کا علاج ہے، سوائے اس کے کہ وہ «سام» ہو ، میں نے عرض کیا کہ «سام» کیا ہے؟ تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: موت ۔
It was narrated that Khalid bin Sa’d said: “We went out and with us was Ghalib bin Abjar. He fell sick along the way, and when we came to Al-Madinah he was sick. Ibn Abu ‘Atiq came to visit him and said to us: ‘You should use this black seed. Take five or seven (seeds) and grind them to a powder, then drop them into his nose with drops of olive oil, on this side and on this side. For ‘Aishah narrated to them that she heard the Messenger of Allah (ﷺ) say: “This black seed is a healing for every disease, except the Sam.” I said: “What is the Sam?” He said: “Death.”

More Hadiths From: Sunan Ibn Majah - Chapter 33